علی رضا سید نے سری نگر میں جامعہ مسجد پر سیکورٹی فورسز کے حملے کی مذمت کی ہے

Ali RAza Syed

Ali RAza Syed

برسلز (پ۔ر) کشمیر کونسل ای یو کے چیئرمین علی رضا سیدنے مقبوضہ کشمیرکے دارالحکومت سری نگرمیں تاریخی جامعہ مسجد اورکشمیریونیورسٹی پر بھارتی سیکورٹی فورسزکے حملے کی سخت الفاظ میں مذمت کی ہے۔ انھوں نے برسلزسے اپنے ایک بیان میں کہاکہ یہ اقدامات انتہائی غیرجمہوری اور غیراخلاقی اور ناقابل قبول ہے۔

واضح رہے کہ مقبوضہ کشمیرکی پولیس نے جمعہ کے روزاس وقت جامعہ مسجد پر آنسو گیس کے شیل فائرکئے جب لوگ وہاں نمازاداکررہے تھے۔ اس حملے میں متعددنمازی زخمی ہوئے ۔ پولیس نے ایک اورکاروائی میں گذشتہ روز کشمیریونیورسٹی کے احاطے میں متعدد طلبہ اورطالبات کو بے دخل کرکے تشدد کانشانہ بنایا جب وہ گذشتہ تین دن سے ایک طالبعلم کی گرفتاری کے خلاف احتجاج کررہے تھے۔

علی رضا سید نے کہاکہ عبادت گاہ کی بے حرمتی اور پرامن اورنہتے طلباء کے خلاف وحشیانہ کاروائی ہرگز قابل قبول نہیں۔ انھوں نے کہاکہ مقبوضہ وادی میں سیکورٹی فورسزسویلین آبادی کے خلاف ہرقسم کی وحشیانہ کاروائی کرنے کے لیے آزادہیں ، خاص طور پر رمضان مبارک میں بھی وہ اس طرح کے تشدد سے گریز نہیں کرتے۔

اس صورتحال پر تشویش ظاہرکرتے ہوئے چیئرمین کشمیرکونسل ای یو نے کہاکہ مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی فورسز کو مارنے، تشددکرنے اور اغوا کرنے کا اجازت نامہ ملاہواہے۔ ان کاروائیوں کے لیے وہ آزاد ہیں اورکسی کو بھی جوابدہ نہیں۔ حالیہ دنوں تسلسل کے ساتھ سوپورکے علاقے میں پراسرارطورپر لوگوں کا قتل عام کیاگیالیکن قاتلوں کے خلاف کوئی کاروائی نہیں ہوئی۔ انھوں نے کہاکہ بھارت دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت کا دعویدار ہے لیکن وہ مقبوضہ کشمیرمیں غیرجمہوری رویہ رکھتاہے

اور دنیا کاکوئی بھی جمہوری معاشرہ مقبوضہ کشمیرکے بے گناہ اور معصوم لوگوں کے خلاف بھارتی ریاستی دہشت گردی کو قبول نہیں کرتا۔چیئرمین کشمیرکونسل ای یو نے کہاکہ جامعہ مسجد پر شیل فائر کرکے بھارتی حکا م نے لوگوں نے مذہبی جذبات کو مجروح کیاہے۔ انھوں نے کہاکہ مقبوضہ کشمیرمیں بڑی تعدادمیں سیکورٹی فورسز کی تعیناتی نے صورتحال کو خراب کررکھاہے اوریہ مقبوضہ علاقہ ایک بڑی جیل میں بدل گیاہے۔ لوگوں کے بنیادی انسانی حقوق پامال ہورہے ہیں اور مقدس مقامات کی بے حرمتی ہورہی ہے۔لوگوں کی جمہوری آواز کو دبانے کے لیے فورسزاخلاقی اقدارکی ہرحد کو عبور کررہی ہیں۔

اس صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے چیئرمین کشمیرکونسل ای یو نے عالمی برادری خصوصاً اقوام متحدہ اور یورپی یونین سے مطالبہ کیا کہ وہ آگے آئیں اور بھارت کو سویلین آبادی کے خلاف بربریت سے روکیں ۔ عالمی طاقتوں کو تسلیم کرناہوگا کہ کشمیرایک بین الاقوامی تنازعہ ہے اور خطے میں کشیدگی کی اصل وجہ ہے۔ عالمی برادی کو چاہیے کہ وہ کشمیریوں کے حق خودارادیت دلوانے کے لیے اپنا وعدہ پورا کرے تاکہ یہ تنازعہ کشمیری عوام کی خواہشات کے مطابق اپنے منطقی انجام کو پہنچ سکے۔