انجمن حسنیہ باصل کے زیراہتمام دس روزہ مجالس کا اہتمام

Majlis held in Basel Switzerland

Majlis held in Basel Switzerland

سوئیٹزرلینڈ (سید علی جیلانی) سوئیٹزرلینڈ کے شہر باصل میں ہر سال کی طرح انجمن حسنیہ باصل نے دس روزہ مجالس کا اہتمام کیا تھا پانچویں مجلس سے خطاب کرتے ہوئے علامہ سید عاشق حسین نقوی نے کہا کہ اللہ کی رسی کو مضبوطی سے تھامے رکھو اور تفرقہ میں نہ پڑھو۔

انہوں نے کہا کہ پہلے مسلمان اپنا تعارف مسلمان کی حیثیت سے کراتے تھے لیکن اب تعارف شیعہ، بریلوی، دیو بندی، وہابی سے کراتے ہیں یہ اسوجہ سے ہوا ہے کہ ہم نے اسلام کو چھوڑ دیا ہے اس کے اصولوں سے منحرف ہو گئے ہیں اور مختلف تفرقہ میں پڑھ گئے ہیں ہم نے قرآن کو محض گھروں میں سجا کر الماریوں میں رکھ دیا ہے اور اسکو پڑھتے نہیں ہیں اور سمجھتے نہیں ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا کہ میں دو چیزیں تمہارے لیئے چھوڑ کے جا رہا ہوں ایک قرآن شریف دوسری اہل بیت اگر ان دو چیزوں کے بتائے ہوئے اصولوں پر چلو گے تو فلاح پاؤ گے۔

انہوں نے بڑے خوبصورت انداز میں حضرت حر رضی اللہ عنہ کا واقعہ بیان کیا کہ وہ کس طرح یزیدی لشکر سے الگ ہو کر قدم حسین میں تشریف لائے شاعر اہل بیت سید آصف نقوی نے خوبصورت رباعی جبء سے سیکھا ہے اس دل کی دھڑکن، بے تاب ہے زکر علی کو سنانے کیلئے پیش کی۔

سید تصور عباس نے فضائل و مصائب آل محمد پیش کیئے عزاداروں نے ماتم کیا اور مولانا عاشق حسین نقوی، سید تمشیل بخاری، نمی عباس، سید اسد کاظمی، رعنا عباس، سید عمران عباس، سید حسن جعفری، ملک عابد حسین، سید تنویر حسین نقوی نے تمام مہمان گرامی کا شکریہ ادا کیا آخر میں لوگوں کو لنگر حسینی دیا گیا۔