برلن میں سفارتخانہ ء پاکستان کی جانب سے یومِ دفاعِ پاکستان کی پچاسویں سالگرہ کا انعقاد

Pakistan Defense Day

Pakistan Defense Day

جرمنی (انجم بلوچستانی) جرمنی کے دارالحکومت برلن میں سفارتخانہء پاکستان کی جانب سے یومِ دفاعِ پاکستان کی پچاسویں سالگرہ منعقد کی گئی۔پاکستانی سفارتخانہ برلن کے ہال میں روایتی جوش و جذبہ سے منائی جانے والی اس تقریب میں برلن اور اسکے گردو نواح میں رہنے والے عام پاکستانی شہریوں، طلباء وطالبات کی کثیر تعداد اور پاکستانی سفارت خانہ کے ا ہلکاروں نے اپنے اہل وعیال کے ہمراہ شرکت کی۔

کمیونٹی رہنمائوں میںاسلامی تحریک برلن کے امیرعبدالوارث ؛ایشین جرمن رفاہی سوسائٹی اورکشمیرفورم انٹرنیشنل کے عالمی چیر مین،پاکستان عوامی تحریک یورپ کے چیف کوآرڈینیٹر،ممتازایشین یورپین صحافی،محمد شکیل چغتائی؛ پاک محمد مسجد اورادارہء منہاج القرآن کے سابق صدر صدیق اکبر؛پاکستان پیپلز پارٹی جرمنی کے پی آر او،سیدمجاہد حسین شاہ اورسینئر رہنما قیصر ملک؛پاکستان مسلم لیگ(ن) برلن کے صد راعجازبٹ،جنرل سکریٹری مرزا بشارت،یوتھ لیگ جرمنی کے چیف کوآرڈینیٹرعنصربٹ؛منہاج القرآن انٹرنیشنل برلن کی مجلس شوریٰ کے صدرخضر حیات تارڑ،منہاج پیس اینڈ اینٹی گریشن کونسل برلن کے صدر محمد ارشاد؛دستک کے مدیررخسار انجم اور دیگر معززین شامل تھے۔

تقریب کا آغازتلاوت ِ کلام ِ پاک سے ہوا۔ ہیڈ آف چانسری ،سجاد حیدرخاںنے صدرِ مملکت اور وزیرِ اعظم کے پیغامات پڑھ کر سنائے۔ پھر آئی ایس پی آر کی طرف سے تیار کردہ ایک ڈاکومینٹری دکھائی گئی ۔اس موقعہ پر دفاعی وفوجی اتاشی، بریگیڈیئر معین الدین غزالی نے اپنے خطاب میں١٩٦٥ء کی سترہ روزہ جنگ کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ” پاکستانی افواج نے جراء ت وبہادری کی ایک نئی تاریخ رقم کی جسکی مثال نہیں ملتی۔

انہوں نے اپنے مقابلے میں پانچ گنا بڑی دشمن فوج کو پسپا کر کے یہ ثابت کر دیا کہ وہ اپنی آزادی کا دفاع کرنا جانتے ہیں ۔ا س کی سب سے بڑی وجہ شوق شہادت ہے،جومسلمانوں اور خصوصاً پاکستانی افواج کا طرہ امتیاز ہے۔اس لئے١٩٦٥ء کی طرح پاک فوج آج بھی ہر قیمت پر وطنِ عزیز کا ہ دفاع کرنے کی لئے تیار ہے اوراس سلسلے میں کسی بھی قسم کی قربانی سے دریغ نہیں کرے گی۔” انہوں نے اس سلسلے میں قومی یکجہتی کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ” یہ قوم کا اتحاد اور افواجِ پاکستان پہ اعتماد تھا ،جس نے ١٩٦٥ء میں پاکستان کو فتح سے ہمکنار کیا اور یہی ضرب عضب کی کامیابی کا سبب ہے۔

پاکستانی افواج پاکستان میں دہشت گردی کے خلاف نبردآزماہیں اور ملک عزیزسے تمام دہشت گردوں،انکے مددگاروں اور سرپرستوں کا قلعہ قمع کر کے دم لیں گی۔ انشااللہ۔ ”جرمنی میں تعینات سفیر پاکستان، سید حسن جاوید نے پاکستانی شہریوں کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ” زندہ قومیں ہمیشہ اپنے ماضی کو یاد رکھتی ہیں اور انہیں کوئی شکست نہیں دے سکتا۔ ١٩٦٥ء کی جنگ میں تعداد اورجنگی سازوسامان کم ہونے کے باوجود پاک فوج کے حوصلے انتہائی بلند تھے اور ہرسمت ایک ہی آواز گونج رہی تھی کہ ہندوستانی حکمران نہیں جانتے کہ انہوں نے کس قوم کو للکارا ہے؟” سفیرِ پاکستان نے پاک فوج کے شہیدوں کو خراجِ تحسین پیش کیا ،جنہوں نے ماضی و حال میںوطنِ عزیز کے دفاع کے لئے اپنی جانوں کے نذرانے پیش کئے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ”پاکستان تیزی سے معاشی ترقی کی راہ پر گامزن ہے اور اسے دنیا کی بڑی طاقتوں کی صف میں شامل ہونے سے اب کوئی طاقت نہیں روک سکتی۔”تقریب کے اختتام پرکشمیر فورم کے سابق صدر،اسلامی تحریک برلن کے سابق امیرخالد محمود نے وطنِ عزیز کے تحفظ و استحکام،خطے میں امن وسلامتی ، نیز پاکستان کی خوشحالی ورترقی کیلئے خصوصی دعا فرمائی۔ ا سکے بعدشرکاء کیلئے طعام کا اہتمام کیا گیا۔