معروف برطانوی تنظیم سٹی آف سینچری برطانیہ کے زیراہتمام ایک یاد گار تقریب

Lord Mayor of Birmingham cllr Ray Hassall

Lord Mayor of Birmingham cllr Ray Hassall

برمنگھم (ایس ایم عرفان طاہر سے) معروف برطانوی تنظیم سٹی آف سینچری برطانیہ کے زیر اہتمام ایک یاد گار تقریب کا انعقاد سٹی کونسل ہا ئوس میں کیا گیا۔ جس میں ویسٹ مڈلینڈز کی سرکاری ، کاروباری، سیاسی و سماجی شخصیات نے بھرپور شرکت کی اس موقع پر لارڈ میئر آف برمنگھم کونسلر رئے ہیسل ، سابق لارڈ میئر آف برمنگھم و کیبنیٹ ممبر کونسلر شفیق شاہ، کونسلر وسیم ظفر،ایڈرائن رنڈل چیئرمین سٹی آف سینچری برطانیہ، ڈینس مینس ڈپٹی چیئرمین سٹی آف سینچری برطانیہ ، جونا تھن ایلس وائس چیئر سٹی آف سینچری برطانیہ نیشنل کمیٹی اینڈ ریڈ کراس،مارک رویس، ما رسیلا ہوکسا مائیگرینٹ ہیلپ،پروفیسر پیٹر وائس چانسلر نیو من یونیورسٹی،پیٹریکا وائس پریذیڈنٹ ڈبلیو ایف ڈبلیو پی،ڈیو ڈ برائون ، رتھ یارک،آفتا ب رحمن ، شبراز احمد اور دیگر بھی موجود تھے۔

اس موقع پر مقررین کا کہنا تھا کہ دنیا بھر کے رفیو جیز کے لیے برمنگھم شہر کے دروازے ہمیشہ کے لیے کھلے ہیں ۔ انہو ں نے کہاکہ ہر جان قیمتی ہے چا ہے وہ کسی بھی علاقہ مذہب اور گروپ سے تعلق رکھتی ہو ۔ انہوں نے کہاکہ تا ریخ گواہ ہے برمنگھم شہر با ہر سے آنے والے تمام تر رفیوجیز کے لیے ایک محفوظ جنت کی حیثیت رکھتا ہے ۔ انہو ں نے کہاکہ ہر مذہب ،رنگ ونسل ، ثقافت اور روایت سے وابستہ افراد کے لیے برمنگھم شہر نے کھلے دل خدما ت پیش کی ہیں جو اسکا جداگا نہ اثا ثہ ہے اور مستقبل قریب میں بھی سریا کے مجبور و مظلوم رفیوجیز ہو ں یا دنیا کے کسی بھی ملک سے تعلق رکھنے والے انکی بقاء اور تحفظ کے لیے اس شہر کو مزید مو ئثر بنا یا جا ئے گا۔

انہوں نے کہاکہ سیاسی پناہ حاصل کرنے والوں اور رفیوجیز کے لیے یہ شہر مزید کشادگی کا حامل ہے ۔ انہو ں نے کہا کہ اس ضمن میں کام کرنے والی تمام تنظیمات ایسے افراد کی بہتری اور امداد کے لیے متحرک ہیں اور فعال کردار ادا کرنے میں مصروف ہیں ۔ انہو ں نے کاکہاکہ ہمیشہ سے برمنگھم کا یہ ترہ امتیاز رہا ہے کہ یہا ں بسنے والوں نے رواداری اور مواخات کو فروغ دیا ہے ۔ انہو ں نے کاکہاکہ اس شہر میں سینکٹروں ممالک کے شہری آباد ہیں جو مختلف نظریات اور عقائد کے باوجود ایک دوسرے کے ساتھ محبت و اخوت کا رشتہ استوار رکھے ہو ئے ہیں۔

انہوں نے کہاکہ بحیثیت محب وطن شہری یہ ہماری اولین ذمہ داری ہے کہ اس شہر کا امن و امان اور سکون قائم رکھا جا ئے اور کسی بیرونی سازش اور تخریب کا ری کو روکنے کے لیے ہمیں یکجا ہونا پڑے گا اور ایک دوسرے کے ساتھ تعاون اور بھائی چارے کو مضبوط بنانا ہو گا۔ انہوں نے کہاکہ ہمیں اپنی اولادوں کو بھی یہ مثبت پیغام دنیا ہے تاکہ وہ اس ملک اور اس شہر کو پر امن اور پر وقار بنا نے کے لیے اپنا کلیدی کردار ادا کریں ۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں نہ صرف ایک دوسرے کو کھلے دل قبول کرنا ہو گا بلکہ ایک دوسرے کی مذہبی آزادی کا خیال کرتے ہو ئے نظریا تی اختلافات کو بھی جمہو ری اقدار کے مطابق قبول کرنا ہو گا۔

انہوں نے کاکہاکہ دہشتگردی اور انتہا پسندی کے خلا ف برمنگھم میں بسنے والی تمام کمیونٹیز اور مقامی حکومت ایک پیچ پر ہیں کسی شر پسند اور دہشتگرد کو اس شہر کا نظم و نسق اور امن و امان سبو تاژ کرنے کی ہر گز اجا زت نہ دیں گے ۔ انہوں نے کاکہاکہ ہمیں ایک دوسرے کے ساتھ صبر و برداشت اور بردبا ری کا رویہ اختیار کرنا ہو گا اسی میں ہما ری بقاء اور سا لمیت کا راز مضمر ہے۔