سفارت خانہ پیرس کی جانب سے ایک تقریب منعقد کی گئی

Zahid Mustafa Awan

Zahid Mustafa Awan

پیرس (زاہد مصطفی اعوان) سفارت خانہ پیرس کی جانب سے پاکستان کے یوم دفاع کے پچاس سال مکمل ہونے پر ایک تقریب منعقد کی گئی جس میں دنیا بھر کے سفارت خانوں کے ڈیفنس اتاشیز سمیت فرانس کے ڈیفنس سیکرٹری نے بھی شرکت کی۔ سفیر پاکستان غالب اقبال نے آنے والے تمام معززین کا سفارت خانہ پیرس میں استقبال کیا۔ سفارت خانہ پیرس کی انٹری پرجنگ ستمبر میں نشان حیدر حاصل کرنے والے شہدا ءکی تصویری نمائش بھی کی گئی اور جنگ ستمبر کے شہدا ءکو خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے پھولوں کی چادریں بھی چڑھائی گئیں۔

پاکستان کے سفیر جناب غالب اقبال نے حاضرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کے عوام اور مسلح افواج مادر وطن کا دفاع کرنے کی بھرپور صلاحیت رکھتے ہیں ۔ دنیا کی کوئی اندرونی یا بیرونی طاقت پاکستان کو نقصان نہیں پہنچا سکتی انہوں نے مزید کہا کہ دفاع وطن کے اسی جذبے سے سرشار ہماری عوام اور افواج دہشت گردی کے خلاف ایک ایسی جنگ لڑ رہے ہیں جو خطرناک بھی ہے اور پیچیدہ بھی۔ تاہم ہم نے اپنی جراءت ، عزم اور اتحاد کی بدولت دہشت گردوں کی کمر توڑ دی ہے۔

فرانس اور پاکستان کے قومی ترانے بجائے گئے-آرمی اور نیول اتاشی کیپٹن راشد محمود نے اس موقع پر صدر پاکستان کا خصوصی پیغام پڑھ کر سنایا جبکہ ٹیکنیکل اتاشی گروپ کیپٹن عامر بشیر نے وزیر اعظم پاکستان کا پیغام پڑھا۔

تقریب سے ڈیفنس اتاشی ائیر کمانڈور فواد حاتمی نے بھی خطاب کیاانہوں نے کہا کہ آج کی جنگ دہشت گردی کے خلاف جنگ ہے اور ہم یہ جنگ لڑ رہے ہیں اور ہم ہر صورت یہ جنگ جےتیں گے اس عزم کے ساتھ جس کا مظاہرہ ہم نے ہمیشہ کیا ہے۔

آج کا دن 1965 میں بھارتی جارحیت کے خلاف جنگ کے دوران فوج اور عوام کی طرف سے پیش کی گئی قربانیوں کی یاد دلاتا ہے یہ دن ایک بزدل دشمن کے خلاف جراءت مندانہ جنگ کا استعارہ ہے -یہ ہماری مسلح افواج کی پیشہ ورانہ مہارت اور ہمارے عوام کی بے مثال جراءت مندی کی یاد دلاتا ہے – یہ دن ہمیں یاد دلاتا ہے کہ نہ صرف دفاع بلکہ عوام کی خوشحالی اور فلاح و بہبود کے لیے ہمیں ایک قوم کے طور پر کام کرنا ہے۔

اس موقع پر کیک کاٹنے کی تقریب سفیر پاکستان غالب اقبال ، مسلح افواج کے سفارتخانے میں ڈیفنس ونگ کے افسران نے سرانجام دی۔

تقریب میں سفارتخانہ کے افسران و عملہ ، دیگر ممالک کے سفارتکاروں اور پیرس میں موجود دفاعی اتاشیوں ، سابقہ فرانسیسی فوجیوں ، دانشوروں ، صحافیوں اور پاکستانی کمیونٹی کے اراکین نے شرکت کی-اور ان کے اعزاز میں پاکستان کلچر کو متعارف کرواتے ہوئے رایتی کھانے بھی پیش کئے گئے۔جنہیں تمام حاضرین نے بہت پسند کیا۔