اس برس یورپ پہنچنے والے مہاجرین کی تعداد گزشتہ برس سے زیادہ ہو سکتی ہے۔ اقوام متحدہ

Refugees

Refugees

واشنگٹن (زاہد مصطفی اعوان) اقوام متحدہ نے خبردار کیا ہے کہ اس برس بحیرہ روم کو عبور کرکے یورپ پہنچنے والے مہاجرین کی تعداد گزشتہ برس سے زیادہ ہو سکتی ہے تاہم رواں برس گزشتہ سال کے مقابلے میں یہ تعداد 40 فیصد کم ہی ہے

اقوام متحدہ کے حکام نے بتایا ہے کہ 2016 کے دوران بحیرہ روم کو عبور کرکے یورپ پہنچنے والے مہاجرین اور تارکین وطن کی تعداد 30 ہزار تک پہنچ گئی ہے اگرچہ رواں برس کے پہلے نو ماہ کے دوران یہ تعداد گزشتہ برس کے مقابلے میں بہت کم ہے لیکن مہاجرت کے اس سفر میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے۔

گزشتہ برس اس سمندری راستے سے یونان اور اٹلی پہنچنے والے مہاجرین کی مجموعی تعداد 5 لاکھ 20 ہزار تھی اقوام متحدہ کے ادارہ برائے مہاجیرن کے مطابق رواں برس البتہ سمندر عبور کرنے والوں کی موت میں ریکارڈ اضافہ ہوا ہے 2016 کے دوران اب تک سمندر میں لاپتہ یاڈوب کر ہلاک ہو جانے والے مہاجرین اور تارکین وطن کی تعداد 3221 ہے جو گزشتہ پورے برس کے مقابلے میں صرف 15 فیصد ہی کم بنتی ہے گزشتہ برس سمندری راستے سے یورپ پہنچنے کی کوشش میں ہلاک ہو جانے والے افراد کی تعداد 3771 تھی۔

اس برس اٹلی پہنچنے والے مہاجرین کی تعداد ایک لاکھ 30 ہزار 4 سو 11 بنتی ہے 2015 کے پہلے نو ماہ کے دوران بھی اتنے ہی مہاجرین اٹلی کے ساحلوں تک پہنچنے میں کامیاب ہو گئے تھے دوسری طرف یونان پہنچنے والے مہاجرین کی تعداد میں نمایاں کمی نوٹ کی گئی ہے۔

اس برس مجموعی طور پر ایک لاکھ 65 ہزار 750 افراد یونانی جزائر تک رسائی حاصل کرنے میں کامیاب ہوئے ہیں گزشتہ برس اسی عرصے میں وہاں پہنچنے والے مہاجرین اور تارکین وطن کی تعداد کے مقابلے میں اس برس 57 فیصد کی کمی ہوئی ہے۔

اس کمی کیلئے ترکی اور یورپی یونین کی مہاجرین سے متعلق ڈیل کو اہم قرار دیا جا رہا ہے۔