روزے کی اہمیت٬ محمد اقبال کیلانی کی کتاب سے

Fasting

Fasting

تحریر : شاہ بانو میر
رمضان کی برکتوں سے محروم رہنے والا بد نصیب ہے حضرت انس بن مالک سے روایت ہے کہ رمضان آیا تو رسول اللہﷺ نے فرمایا ٬ جو تم پر آیا ہے اِس میں ایک رات ایسی ہے جو(قدرو منزلت کے اعتبار سے) ہزار مہینوں سے بہتر ہے٬ جو شخص اس (کی سعادت حاصل کرنے سے) رہا ٬ وہ ہر بھلائی سے محروم رہا ٬ نیز فرمایا لیلة القدر کی سعادت سے صرف بے نصیب ہی محروم رہ سکتا ہے٬ اسے ابن ماجہ نے روایت کیا٬ رمضان پانے کے باوجود مغفرت حاصل نہ کرنے والے کیلئے ہلاکت ہے۔

حضرت کعب بن عجرہ ؓ فرماتے ہیں٬ رسول اللہ ﷺ نے صحابہ کرام ؓ سے فرمایا ٬ منبر لاؤ ہم منبر لے آئے جب نبی پاکﷺ پہلی سیڑھی پر چڑھے تو فرمایا “” آمین “” پھر جب دوسری سیڑہی پر چڑھے تو فرمایا “”آمین “” جب تیسری سیڑہی پر چڑھے تو فرمایا “” آمین “” جب رسول اللہ ﷺ منبر پر چڑھے تو ہم نے عرض کیا “” یا رسول اللہﷺ آج ہم نے آپ سے ایسی بات سنی جو اس سے پہلے کبھی نہیں سنی تھی۔

آپﷺ نے فرمایا جناب جبرائیل ؑ میرے پاس آئے اور کہا اس شخص کیلئے ہلاکت ہے جس نے رمضان کا مہینہ پایا اور اپنے لئے بخشش اور معافی نہ حاصل کر سکا ٬اس کے جواب میں میں نے آمین کہی ٬جب دوسری سیڑہی پر چڑھا تو جناب جبرئیل نے کہا ہلاکت ہے اُس آدمی کیلئے جس کے سامنے آپﷺ کا ذکر کیا جائے اور وہ آپﷺ پر درود نہ بھیجے ٬ میں نے اس کے جواب میں آمین کہی۔

Hazrat Mohammad PBUH

Hazrat Mohammad PBUH

پھر جب تیسری سیڑہی پر چڑھا تو جناب جبرائیل ؑ نے کہا جس شخص نے اپنے ماں باپ دونوں میں سے کسی ایک کو بڑھاپے کی حالت میں پایا اور انکی خدمت کر کے جنت حاصل نہ کی اس کے لئے بھی ہلاکت ہے٬ میں نے اس کے جواب میں آمین کہی اسے حاکم نے روایت کیا ہے٬ روزہ خوروں کا عبرتناک انجام حضرت ابو امامہ باہلی ؓ کہتے ہیں کہ میں نے رسول اللہ ﷺ کو فرماتے سنا ٬ میں سویا ہوا تھا اور میرے پاس دو آدمی آئے ٬ انہوں نے مجھے بازوؤں سے پکڑا اور مجھے ایک مشکل چڑہائی والے پہاڑ پر لائے اور دونوں نے کہا٬ اس پر چڑہیں میں نے کہا “” میں نہیں چڑھ سکتا””۔

انہوں نے کہا “” ہم آپﷺ کیلئے سہولت پیدا کردیں گے ٬ پس میں چڑھ گیا ٬ حتیٰ کہ میں پہاڑ کی چوٹی پر پہنچ گیا٬ جہاں میں نے شدید چیخ و پکار کی آوازیں سنیں ٬ میں نے پوچھا ٬ یہ آوازیں کیسی ہیں؟ انہوں نے بتایا “” یہ جہنمیوں کی چیخ و پکار ہے ٬ پھر وہ میرے ساتھ آگے بڑھے جہاں میں نے کچھ لوگوں کو الٹے لٹکے دیکھے۔

جِن کے منہ کو چِیرا دیا گیا تھا٬ جس سے خون بہہ رہا ہے٬ میں نے پوچھا “” یہ کون لوگ ہیں؟ “” انہوں نے جواب دیایہ وہ لوگ ہیں جو روزہ وقت سے پہلے افطار کر لیا کرتے تھے٬اسے ابن خزیمہ نے روایت کیا۔

Shahbano Mir

Shahbano Mir

تحریر : شاہ بانو میر