سفیر پاکستان ڈاکٹر سعید خان مہمند کی سکندر ریاض چوہان سے ملاقات

Dr. Sead Khan Mehmnd

Dr. Sead Khan Mehmnd

ایتھنز (سکندر ریاض چوہان) حکومت یونان کے نئے مسودہ قانون کے مطابق سات سال کا ثبوت رکھنے والے افراد کو قانونی حثیت دیے جانے پر سفارت خانہ پاکستان ایسے پاکستانیوں کو بھرپور معاونت دے گا اور ان کے پاسپورٹس کے اجراء میں کوئی دقیقہ فروگزاشت نہیں رکھی جائے گی حکومت پاکستان نے پاسپورٹس ڈیٹاکے استعدادکار کو بڑھا دیا ہے۔

سفیر پاکستان ڈاکٹر سعید خان مہمند نے نمائندہ سے ایک ملاقات کے دوران واضح کیا کہ ان کی جانب سے پیش کی گئی تجاویزپر حکومت پاکستان کو پہلے بھی آگاہ کیا تھا جس کے بعد وبارہ یاددہانی اور فوری توجہ کی اپیل پر پاسپورٹس ڈیٹا کی استعداد بڑھادی ہے اور عملے میں مزید اضافہ کرکے اس کی رفتارکوتیزکردیاگیاہے۔انھوںنے کہاکہ جیساکہ تجاویزمیں اورسفارت خانہ کی جانب سے پہلے بھی پاسپورٹس کے لیے مزید سہولیات مانگی گئی تھی کیونکہ تیس نومبر کے بعد منئیویل(ہاتھ کے لکھے)پاسپورٹس پر پابندی اور حکومت یونان کے نئے قانون جس میں سات سالہ ثبوت کے حامل افراد کو قانونی حثیت دیے جانے پرتوجہ دلائی گئی جس پر پہلے یہ تعداد چالیس تا پچاس تھی جو اس وقت اسی سے زائد ہوگئی ہے جبکہ عملے کے افراد کو تربیت بھی دی جارہی ہے جس کے بعد MRPبنانے کے لیے مزید ایک کمپوٹر نصب کردیاجائے گا جس کی منظوری متعلقہ ادارے سے ہوچکی ہے اس مشینری کی تنصیب کے بعد پاسپورٹس ڈیٹاکوسوسے زائد کردیاجائے گا۔

انھوں نے کہاکہ وہ پاکستانی برادری کو سہولیات فراہم کرنے کے لیے اپنی بھرپور کاوشوں میں ہیں تاکہ ان کے متعلقہ دستاویزات کوجلد تیار کرنے مددفراہم کی جاسکے۔انھوں نے واضح کیاکہ شناختی کارڈزکے حصول کے لیے وزارت داخلہ نے آن لائن سسٹم کے ذریعہ سے درخواستیں وصول کرنے کے نظام کو متعارف کرایاہے اور تمام سفارت خانوں کو شناختی کارڈز کی درخواستیں وصول کرنے سے منع کرتے ہوئے آن لائن سروس سے صارفین کو درخواست جمع کرنے کاکہاہے تاہم ان کی جانب سے لوگوں کی مشکلات سامنے رکھتے ہوئے شناختی کارڈز کی درخواستیں وصول کی جارہی ہیں کیونکہ یہاں پر مقیم پاکستانی آن لائن سسٹم اور کریڈٹ کارڈز نہ ہونے کی بناپر شدید مشکلات کاشکار ہوسکتے ہیں۔