پاکستان عوامی تحریک سپین کے زیر اہتمام فرانس میں دہشتگردی کیخلاف پاکستانی کمیونٹی کا احتجاج

Protest Awami Tehreek

Protest Awami Tehreek

فرانس (محمد یوسف چوہدری) دارالحکومت پیرس میں ہونیوالی دہشت گردی جس میں ایک سو سے زیادہ افراد جاںبحق اور سینکڑوں زخمی ہو ئے،اس واقعے کی شدید مذمت اور فرانس کی عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی کیلئے سپین میں پاکستان عوامی تحریک اور منہاج القرآن انٹرنیشنل کے زیر اہتمام واقعہ کے اگلے دن ہفتہ 14 نومبر 2015ء کی شام بارسلونا شہر کے مرکزی مقام رامبلہ رابال RamblaRaval پر ایک احتجاجی مظاہرہ کیا گیا جس میں پاکستانی کمیونٹی کی مختلف تنظیمات کے کارکنان کے ساتھ ساتھ بنگلہ دیشی ،مراکشی اور مقامی سپینش لوگوںنے کثیر تعداد میں شرکت کی ۔

مظاہرے کے شرکاء نے ہاتھوں میں کتبے اٹھا رکھے تھے جن پر اسلام کے نام پر دہشتگردی نامنظور ،دہشتگردوں کا کوئی مذہب نہیں ہوتا، ہم بطور مسلمان دہشتگردی کی مذمت کرتے ہیں، دہشتگردی اور اسلام کا کوئی تعلق نہیں جیسے نعرے درج تھے۔ اس موقع پر کیلئے مظاہرین نے مائیک کے ذریعے اپنے خیالات کا اظہار بھی کیااور ہر قسم کی دہشتگردی اور خصوصی طورپراسلام کے نام پر کی جانے والی دہشتگردی کی شدید الفاظ میں مذمت کی۔

امیدوار برائے سپینش قومی اسمبلی اور پاکستان عوامی تحریک کے صدر محمد اقبال چوہدری نے کہا کہ اسلام نے اللہ کی کتاب کے ذریعے لوگوں کو تاقیامت ضابطہ حیات دیا اور اللہ کے رسول ۖ نے اپنی عملی زندگی سے ہمیں درس دیا کہ دشمن کے ساتھ بھی اچھا برتائو رکھنا چاہیے، بے گناہ تو دور کی بات گنہگار کے ساتھ بھی حضور نبی کریم ۖ نے صلہ رحمی کا درس دیا ہے لیکن نہ جانے یہ کون لوگ ہیں جو اسلام کے نام پر دہشتگردی کر رہے ہیں اور پوری دنیا میں اسلام کی بدنامی کا باعث بن رہے ہیں انہوں نے کہا کہ ہم دکھ کی اس گھڑی میں فرانسیسی عوام کے ساتھ ہیں اور دہشتگردی کی شدید مذمت کرتے ہیں۔

احتجاجی مظاہرہ میں دیگر مقررین نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کیا جن میں منہاج یوتھ لیگ سپین کے حسنات مصطفی، منہاج مصالحتی کونسل کے عمیر ڈار، راجہ سونی، سینئر صحافی جاوید مغل اور دیگر شامل تھے، مقررین نے کہا کہ فرانس میں ہونیوالی دہشتگردی سے صرف فرانس کی عوام ہی نہیں بلکہ پوری دنیا کو دکھ ہوا ہے،مسلمان امن پسند ہیں اور ہم ان کے ساتھ کھڑے ہیں، پیرس واقعے کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے دہشتگردگروپ سے تعلق رکھنے افراد کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں، پیرس میں ہونے والی دہشتگردی ایک غیر انسانی فعل ہے دہشگرد انسانیت کے دشمن ہیں جن کا قلع قمع کرنا انتہائی ضروری ہے، اسلام امن کا دین ہے جو دہشتگردانہ واقعات کی اجازت نہیں دیتا ،دہشتگردوں کا مسلمانوں کے ساتھ کوئی تعلق نہیں ۔آخر میں محمد اقبال چوہدری کی درخواست پر مظاہرین نے ایک منٹ کی خاموشی بھی اختیار کی۔

واضح رہے کہ پیرس واقعہ کے بعد کسی بھی غیر ملکی اور مسلمان تنظیم کی طرف سے یہ پہلا باقاعدہ احتجاج تھا جس کے ذریعے پاکستانی کمیونٹی نے دہشتگردی اور دہشتگردوں سے اپنی لا تعلقی کا اظہار کرنے کے ساتھ ساتھ اسلام کو سلامتی اور امن کا دین متعارف کروانے کے لیے شارٹ نوٹس پر بھرپور انداز میں شرکت کی ۔ اس موقع پر کوریج کے لیے بارسلونا شہر کے سرکاری ٹیلیویژن اور مختلف اُردو و سپینش اخبارات اور ٹی وی چینلز کے نمائندگان بھی موجود تھے۔ بارسلونا ٹیلی ویژن نے کچھ دیر بعد نشر ہونے والے خبرنامے میں اس احتجاج کی خصوصی رپورٹ بھی نشر کی جس سے سپین میں مسلمان مخالف لابیز کی طرف سے جاری کی جانے والی ایسی خبروں کا قلع قمع ہوا جن کے مطابق مسلمان دہشتگردی سے لاتعلقی کااظہار کرنے کے لیے کتراتے ہیں۔

رپورٹ: محمد یوسف چوہدری
مرتب: نوید احمد اندلسی