پاکستانی کمیونٹی فورم آسٹریا کا جنرل اجلاس جس میں 28 تنظیموں کے نمائندگان کی شرکت

PCFA JARNAL IJLAS VIENNA

PCFA JARNAL IJLAS VIENNA

ویانا (اکرم باجوہ) پاکستانی کمیونٹی فورم آسٹریا مشاورتی کونسل کے صدر ندیم خان کی زیر صدارت جنرل اجلاس 16 اپریل کی سپہر منعقد ہوا جس میں 28 پاکستانی تنظیموں سالز برگ، ہورن، سٹویا مارک بورگرلینڈ اور ویانا کے نمائندگان نے بھر پور شرکت کی اور الیکشن میں بھرپور حصہ لیا اس کے علاوہ پاکستانی کمیونٹی فورم آسٹریا مشاورتی کونسل کے سرپرست اعلیٰ اور مجلس عاملہ کے چیرمین لالہ محمد حسین خان ، میڈیا کوآرڈینیٹر اکرم باجوہ اور فورم کے روح رواں خواجہ منظور احمد بھی جنرل اجلاس میں موجود تھے۔

اجلاس کا باقائدہ آغاز حافظ محمد نعیم آف ہورن اور سید عبدالرحمان شاہ کی تلاوت قرآن سے کیا گیا ۔سٹیج سیکرٹری کے فرائض خواجہ منظور احمد نے ادا کرتے ہوئے تمام حاضرین تنظیموں کو مخاطب ہو کر کہا کہ پاکستان کی محبت کی خاطر ایک پلیٹ فارم پر جمع ہوکر جو آج یکجہتی کا ثبوت فراہم کیا گیا ہے ہمارا مقصد ہی لوگوں کے دل جوڑنا ہے اور کمیونٹی میں پیار بانٹنا ہے اور دوریاں مٹانا ہے پاکستانی کمیونٹی فورم کی جانب سے آپ سب کو خوش آمدید کہتا ہوں ۔ پاکستانی کمیونٹی فورم آسٹریا مشاورتی کونسل کے صدر ندیم خان نے کہا کہ آج آپ سب کو اتنی تعداد میں ایک پلیٹ فارم پر اکھٹے دیکھ کر بہت خوشی ہوئی اور28 تنظیموں کے نمائندگان اس جنرل اجلاس میں موجود ہیں جن کا میں تہہ دل سے شکریہ ادا کرتا ہوں کہ آپ نے پاکستان کی خاطر اپنا قیمتی وقت نکالا اُنہوں نے مذید کہا کہ آج میں آپ کو بتانا چاہتا ہوں کہ اس فورم کو چلانے کے لیے کیا کیا مشکلات آئیں اوروہ کون لوگ تھے جو اس فورم کو اپنی ذات کی خاطر اور عہدوں کے لالچ میں ہم کو آگے بڑھنے سے طرح طرح کی رکاوٹیں کھڑی کرتے رہے اور پھر ناکام ہوئے اور آئندہ بھی انشاء اللہ ناکام ہونگے۔

اُنہوں نے کہا کہ اگر ان لوگوں کا ماضی دیکھ لیں تو آپ کو فوراََسمجھ آجائے گی کہ یہ لوگ شروع سے ہی کمیونٹی کو مذہب کے نام پرحصوں میں بانٹتے آئے ہیں یہ لوگ دین کی خدمت میں بھی آگے اور سیاست میں بھی پیش پیش اور دین کا لبادہ اوڑھا ہوا ہے آج اگر اللہ نے ہمیں ایک موقع دیا ہے کہ ہم سب ایک قوم ہو جائیں تو پھر یہ لوگ متحرک ہوگے کہ پاکستانی کیوں ایک پلیٹ فارم پر جمع ہو رہے ہیں اس کی مثال گذشتہ دنوں منہاج سنٹر میں حاجی اسلم ملتانی جو یہاں موجود بھی ہیں نے ایک بہت شاندار مشاعرہ کا اہتمام کیا جس میں سفارت خانہ ویانا کے اعلیٰ آفسران بھی موجود تھے مشاعرہ کامیاب ہوگیا پھر ان لوگوں نے گندی حرکت یہ کہ آدھی رات کو حاجی اسلم کو کسی بہانے سے اُس کے گھر سے نیچے بلایا اور ساتھ گاڑی میں بیٹھا کر اپنے آپ کو معزز کہلانے والا کے گھر لے گے اور دباو ڈال کر ایک ویڈیو بنائی گی جس میں دو تین الحاج شامل تھے بعد میں حاجی اسلم نے دوسری ویڈیو جاری کی جس میں کہا کہ مجھ پر دباو ڈال کر یہ ویڈیوجاری کی اور میرئے سے زبردستی بیان دلوایا گیا اب آپ لوگ فیصلہ کریں یہ کتنی زلیل حرکت ہے اور لوگوں کو اغوا کرتے ہیں اور یہ گروپ کتنے شرفاء کا ہے ۔مزید کہا کہ حاجی اسلم یہ کیس ابھی بھی اندراج کرا سکتا ہے مگر جب یہ کیس چلے گا تو پاکستان کا نام تو ضرور آئے گا اس لیے ہم نے ایسا کرنے سے منع کر رکھا ہے۔

اس کے علاوہ دوسرئے گروپ نے میڈیا کے حوالہ سے اکرم باجوہ پر بھی کوریج کی پابندی لگائی ہے آپ بتائیں یہ پاکستانیوں کو ملانے کا کام کر رہے ہیں یا حصوں میں بانٹنے کا کام کررہے ہیںحالانکہ اکرم باجوہ میڈیا کے زریعے پاکستانی کمیونٹی کی بے لوث خدمت کررہے ہیں اور ان لوگوں کو لیڈر بنانے والا بھی یہی میڈیا ہے۔باقی میں آپ سب کو کہتا ہوں آپ نیوٹرل رہیں اور جو کوئی آپ لوگوں کی صیح خدمت کرتا ہے اُس کا ساتھ دیں اور آپ سب جگہوں پر جائیں اور ایک دوسرئے پر پابندیاں نہ لگائیں ۔اب میں آخری وارننگ دیتاہوں کہ آئندہ کسی کہ ساتھ کوئی زیادتی کی گی تو ہم بھی اُس کے خلاف قانونی کاروائی کا حق رکھتے ہیں اور ہمارئے دروازئے مذاکرات کے لیے کھلے ہیں ۔حبیب الرحمان،حافظ نعیم اور حاجی سلطان نے مذاکرات پر بات کی تو ندیم خان نے کہا کہ آپ لوگ آگے آئیں اور اپنا اپنا کردار ادا کریں ہم آپ کے ساتھ ہیں جہاں ہمیں بلائیں گے ہم آجائیں گے ۔ندیم خان نے مذید کہا کہ اتنی گندی حرکتیں کرنے کے باوجود ان لوگوں کو نکالا نہ جاتا تو کیا کرتے کچھ کو ان کی حرکتوں سے نکالا گیا کچھ عہدوں کی خاطر اپنا چہرہ بے نقاب کر گے۔

جنرل اجلاس میں میڈیا کوآرڈینیٹر اکرم باجوہ نے 14 اپریل تک جن امیدواروں نے جن عہدوں کے لیے اپنے کاغذات نامزدگی جمع کرائے تھے ان میں سینئر نائب صدر حاجی محمد ارشد باجوہ ،نائب صد ر باوا سید غضنفر علی شاہ،نائب صدر دوئم حاجی ملک امین اعوان،جنرل سیکرٹری خواجہ منظور احمد ،اسسٹنٹ جنرل سیکرٹری حاجی ملک عابد،فنانس سیکرٹری محمد انوراور اسسٹنٹ فنانس سیکرٹری علی زوالفقارشامل تھے کا اعلان کیا اور جنرل اجلاس میں مجلس عاملہ کی تنظیموں کا نام لیکر پکارا گیا اور 28 پاکستانی تنظیموں نے اپنا اپنا ہاتھ اُٹھا کر اپنی اپنی موجودگی ظاہر کی ۔پاکستانی کمیونٹی فورم کی خالی اور اضافی سیٹوں پر صرف ایک ایک امیدوار نے کاغذات نامزدگی جمع کرائے تھے لہذا ان سب کو بلامقابلہ کامیاب قرار دیا جاتا ہے ور خوش اسلوبی سے الیکشن کا مرحلہ سر انجام پایا ۔مجلس عاملہ کے چیرمین لالہ محمدحسین خان نے تمام نومنتخب امیدواروں کو مبارک باد دی اور کہا کہ آج فورم کی ٹیم پوری ہوگی ہے اب انشاء اللہ ہم سب کندھے سے کندھا ملا کر پاکستان کی خدمت کریں گے اور نوجوانوں کے لیے کچھ کرکے دکھائیں گے آج ہمیں پتہ چل رہا ہے کہ ہم اپنوں میں بیٹھے ہیں کیونکہ رکاوٹیں ڈالنے والے اپنا علیحدہ گروپ بنا چکے ہیں۔

نو منتخب عہدیداران سینئر نائب صدر حاجی محمد ارشد باجوہ ،نائب صد ر باوا سید غضنفر علی شاہ،نائب صدر دوئم حاجی ملک امین اعوان،جنرل سیکرٹری خواجہ منظور احمد ،اسسٹنٹ جنرل سیکرٹری حاجی ملک عابد، فنانس سیکرٹری محمد انوراور اسسٹنٹ فنانس سیکرٹری علی زوالفقار نے بھی اپنے اپنے خیالات کا اظہار کیا اور اُنہیں منتخب کرنے پر شکریہ ادا کیا۔سالزبرگ سے سید شاہد شاہ،عبدالسلام فرید ،بروگن لینڈ سے محمد شاہد،محمدطارق،حبیب الرحمان خان،ہورن سے حافظ محمدنعیم ،سوٹویا مارک سے نوید عاصم،رانا عبدالسلام خان اور عمران مغل نے بھی اپنے اپنے خیالات کا اظہار کیا اور نومنتخب عہدیداران کو مبارک باد دی۔پاکستانی کمیونٹی فورم کے سرپرست اعلیٰ نے اپنے خطاب میں کہا کہ آج مشاورتی کونسل مکمل ہوگی ہے اور میں دوسرئے شہروں سے آنے والوں کا بھی شکریہ ادا کرتا ہوں باقی اس فورم کو مکمل کرنے میں کیا کیا مشکلات آئیں اس کو چھ ماہ لگ گے اس موقع پر میں ندیم خان ،اکرم باجوہ اور خواجہ منظور احمد کو بھی اخراج تحسین پیش کرتا ہوں جومشکل حالات میں ثابت قدم رہے اور ارشد باجوہ جو اس فورم کا حصہ نہ ہوتے ہوئے بھی پاکستان کے لیے کام کرتے رہے خصوصاََپیس واک اور کشمیر مظاہرہ میں تعاون کیا۔

کمیونٹی کی خدمت میں ہمیشہ پیش پیش رہنے والے نعیم خان کی خدمات کو سراہا۔اور میں مشاورتی کونسل کے نو منتخب عہدیداران کو مبارک باد پیش کرتا ہوں اور امید کرتا ہوں کہ نئی ٹیم نئے ولولے کے ساتھ پاکستان کی خدمت کریں گے۔اُنہوں نے مذید کہا کہ اس فورم کا پھل آپ کی آنے والی نسل کھائے گی ۔سرپرست اعلیٰ نے ایڈوائزری مشاورتی کو نسل کا اعلان کیا اُن میں شاہد شاہ سالزبرگ،حافظ محمد نعیم آف ہورن،محمدشاہد بورگرلینڈ، نوید عاصم سٹویامارک، حاجی نعیم خان،رانا عبدالسلام خان،عمران علی مغل ،حبیب الرحمان خان،سٹوڈنٹ شامل ہیں۔ ایڈوائزری مشاورتی کونسل میں صدر ندیم خان اور چیرمین لالہ محمد حسین خان بھی شامل ہونگے۔اور باقی جو تنظیم اپنے طور پر جو پروگرام کرنا چاہتی ہے وہ کرئے اور جو PCFA کے ساتھ مل کر کرانا چاہتا ہے وہ مل بیٹھ کے بات کی جاسکتی ہے اور اس فورم میں خواتین کا ونگ جلد بنایا جائے گا اورقومی تہواروں کے پروگرامز کی تفصیل جلد شائع کردی جائے گی اور آپ سب کا جنرل اجلاس میں آنے کا بہت شکریہ۔