پیرس ادبی فورم کے زیراہتمام دوسرا شاندار عالمی مشاعرہ

Paris Literary Forum Event

Paris Literary Forum Event

پیرس (سمن شاہ) پیرس ادبی فورم کے زیرِ اہتمام دوسرے شاندار عالمی مشاعرہ کا انعقاد کیا گیا مشاعرہ کی یہ پروقار تقریب ذائقہ ریسٹورنٹ Villiers Le Bel میں منعقد کی گئی اس عالمی مشاعرہ میں مہمانانِ گرامی غزل انصاری انگلینڈ، عاطف توقیر جرمنی،نعیم حیدر برمنگھم، راحت زاہد اسکاٹ لینڈ، نے بھر پور شرکت کی۔

تقریب کی نظامت کے فرائض پیرس ادبی فورم کی صدر شاعرہ سمن شاہ اور جنرل سیکریٹری شاعر محمود ایاز محمود نے بخوبی انجام دیئے عالمی مشاعرہ کی صدارت اسکاٹ لینڈ گلاسگو کی معروف شاعرہ محترمہ راحت زاہد نے کی۔ مقامی شعراء میں توقیر رضا، عاشق حسین،مقبول الہی شاکر، اختر حسین،سرفراز بیگ،عظمت گل، کے علاوہ پیرس ادبی فورم کی ٹیم عاکف غنی نائب صدر،وقار ہاشمی پروگرام آرگنائزر،جاوید آصی جاوید نے بھی اپنے کلام سے تقریب کو رونق بخشی۔

عالمی مشاعرہ میں دنیا بھر سے آئے شعراء کرام کے کلام کو بہت سراہا گیا تقریب میں پاکستانی کمونیٹی کے سماجی،سیاسی،مذہبی حلقوں سے منسلک اہم شخصیات کے علاوہ لوگوں کی ایک بہت بڑی تعداد نے شرکت کی اور پرگرام سے بے حد محظوظ ہوئے۔ تقریب میں شامل لوگوں کی رائے کے مطابق پیرس میں ایسی تقاریب کا انعقاد ہونا چاہیےادبی محافل جہاں علم و ادب کی ترویج کرتی ہیں وہیں اپنی تہذیب و تمدن ثقافت اور اپنی اردو زبان کو فروغ بھی دیتی ہیں مشاعرہ کے بعد محفل موسیقی کا اہتمام کیا گیا۔

پیرس کے مقامی گلوکار سہیل محمود، سری لنکا کے ڈیوڈ اور سادھنا چرن، رامش،اور امیش پاشا نے پرفارم کر کہ محفل کو سرگم سے بھر دیا ذائقہ ریسٹورنٹ کے دلفریب ماحول اور لذیذ کھانوں نے تقریب میں چار چاند لگا دیے۔ پیرس ادبی فورم کے دوسرے شاندار عالمی مشاعرے کی کامیابی پر صدر سمن شاہ نے پروگرام کے اختتام پراپنی ٹیم ایاز محمود ایاز جنرل سیکریٹری، عاکف غنی نائب صدر، وقار بخشی پروگرام آرگنائزر، آصف جاوید عاصی فاؤنڈر ممبر کا شکریہ ادا کرتے ہوئے انہیں پروگرام کی تیاریوں اور کوششوں کے لئے سرہاتے ہوئے مبارک باد دی۔

تمام حاظرین محفل، میڈیا سے متعلقہ رضا چودھری،کامران حنیف جیو ٹی وی، خالد بشیر اے آر وائی، علی اشفاق، صاحبزادہ عتیق وقت ٹی وی،ناصرہ خان گجرات لنک،زاہد مصطفی اعوان ، عصام طاہر، عمران چودھری،مہر راحیل،اور پاکستان عوامی تحریک کے تمام مہانوں اور جناب طاہر عباس گورائیہ کا شکریہ ادا کیا۔

پیرس ادبی فورم کے زیر اہتمام اب تک عالمی مشاعرے، ادبی نشستیں، کتابوں کی رونمائی، اور شاعروں کے اعزاز میں کئی تقاریب منعقد کی جا چکی ہیں پیرس ادبی فورم دیار غیر میں جس طرح اپنی زبان کے فروغ کے لئے کوشاں ہے وہ لائق تحسین ہے پیرس ادبی فورم کی صدر نے اس بات کا بھی اظہار کیا کہ اس طرح کی محافل منعقد کرنے کے لیے کئی مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہے جس میں سب سے بڑا مسئلہ پروگرام کے اخراجات ہوتے ہیں۔

پاکستان اور پاکستان سے باہر سفارت خانوں کو ثقافتی بجٹ دیا جاتا ہے تانکہ ایسی تقریب میں ا پنی ثقافت اور ادب کو نمایاں کیا جا سکے لیکن یہ امر افسوسناک ہے کہ سفارت خانے اس بجٹ کو ادبی تنظیموں کو نہیں دیتےاور ایسے تمام پرگرام تنظمیں اپنے ذاتی وسائل سے کرتی ہیں۔ پیرس ادبی فورم کے اس عالمی مشاعرے میں لوگوں کی ایک بڑی تعداد نے ثابت کیا پیرس میں بسنے والے پاکستانی ادب نواز ہیں اور اپنی تہذیب سے محبت کرتے ہیں۔