سردار صغیر کی غیر مشروط رہائی پر مبارک باد پیش کرتے ہیں

Leaders

Leaders

لیوٹن برطانیہ (تیمور لون) پاکستانی زیر انتظام کشمیر کی کٹپتلی حکومت کی جانب سے قوم پرست رہنما سردار صغیر کو ریاست جموں کشمیر پر قبأیلیوں کی جانب سے حملہ کے خلاف احتجاج کرنے پر ان کے ساتھیوں سمیت گرفتار کر لیا گیا تھاجس پرریاست میں موجود اور بیرون ممالک تمام قوم پرست و آزادی پسند سیاسی جماعتوں نے صدائے احتجاج بلند کیا جموں کشمیر نیشنل انڈپینڈنس الائنس تمام قوم پرست و آزادی پسند سیاسی رہنماؤں اور کارکنان کی جدو جہد کو سلام پیش کرتا ہے اور سردار صغیر اور ساتھیوں کی غیر مشروط رہائی پر ان کو مبارکباد پیش کرتا ہے۔

جموں کشمیر نیشنل انڈپینڈنس الائنس گلگت بلتستان میں گرفتار کرنل نادر ، طاہر علی طاہر ، بابا جان ، پاکستانی و بھارتی مقبوضہ کشمیر میں اسیر آزادی پسند و قوم پرست رہنماؤں کی گرفتاریوں کی بھی پر زور مذمت کرتا ہے اور مطالبہ کرتا ہے کہ تمام سیاسی رہنماؤں اورکارکنان کو فی الفور غیر مشروط طور پر رہا کیا جائے، آزادی کے لئے آواز اٹھان ہمارا حق ہے اور یہ حق ہم سے دنیا کی کوئی عدالت نہیں چھین سکتی۔

جموں کشمیر نیشنل انڈپینڈنس الائنس بھارتی مقبوضہ مقبوضہ کشمیر ، پاکستانی مقبوضہ کشمیر اور گلگت بلتستان میں جاری سامراج کیخلاف آزادی کی تمام تحریکوں کی بھر پور حمایت کرتا آیا ہے اور کرتا رہیگا تاریخ گواہ ہے کہ لاٹھی چارج ، تشدد اور گرفتاریاں آزادی کیلئے جاری جدو جہد کی راہ میں رکاوٹ نہیں بن سکیں ۔ دونوں اطراف کے کٹپتلی حکمران اپنے وقتی آقاؤں کی خوشنودی حاصل کرنے کیلئے جو حرکتیں کر رہے ہیں۔

ان میں انہیں کبھی بھی کامیابی حاصل نہیں ہو سکتی اور آزادی کی راہ میں ان کی کوئی حیثیت نہیں ایسے کردار وں نے ہمیشہ سامراج کے ایجنٹوں کا کردار ادا کیا ہے جن کا نام تاریخ میں ضمیر فروشوں کی فہرست میںشامل کیا جاتا ہے ۔ دونوں اطراف کے کشمیریوں پر عرصہ حیات تنگ کیا جا رہا ہے جس کی ہر گز اجازت نہیں دی جائیگی ہم اپنی بنیادی حقوق کے حصول کی جنگ ہر محاز پر جاری رکھیں گے اور ہر فورم پر صدائے احتجاج بلند کرتے رہیں گے۔

ان خیالات کا اظہار نیشنل انڈپینڈنس الائنس کے چیٔرمین محمود کشمیری اور دیگر رہنماؤں عباس بٹ ، غلام حسین ، امجد یوسف، جنید قریشی ،ندیم اسلم ، صفدر میر ، شیر عالم نے اخباری نمائندوں سے گفتگو کے دوران کیا ۔ نیشنل انڈپینڈنس الائنس کے چیئر مین محمود کشمیر ی کی جانب سے میٹنگ طلب کر رکھی ہے جس میں آئندہ لائحہ عمل پر بات چیت کی جائیگی۔