جواں سال نسل کو دہشتگرد تنظیم داعش سے محفوظ بنانا ہوگا، الشیخ سید محمد الیعقوبی

Shaykh Syed Muhammad Abuüfl Huda Al Yaqoubi

Shaykh Syed Muhammad Abuüfl Huda Al Yaqoubi

برمنگھم ( ایس ایم عرفان طاہر سے) جواں سال نسل کو انتہا پسند اور دہشتگرد تنظیم ISIS اور داعش سے محفوظ بنانا ہوگا، بے گناہ انسانوں کا قتل عام عورتوں کی بے حرمتی اور اسلام کو بدنام کرنے والے خوارج کا مسلمانوں سے کوئی تعلق ناطہ نہیں ہے ،بین الاقوامی سوشل میڈیا پر پھیلا ئے جا نے والے لٹریچر کی حمایت یا مخالفت کرنے سے قبل کسی معتبر ذرائع سے تصدیق کرلینا ضروری ہے۔

ان خیالات کا اظہار عالمی مبلغ اسلام و معروف مذہبی سکالر الشیخ سید محمد الیعقوبی نے Sacred Knowledge کے زیر اہتمام اپنی کتاب Refuting ISIS کی تقریب رونمائی سے ویڈیو لنک کے زریعہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہاکہ بلا شبہ اسلام امن برداشت اور رواداری سکھا تا ہے اور کسی پر جبر و ظلم کی کوئی اجازت نہیں ہے ۔ انہو ں نے کہا کہ درحقیقت جو لوگ سریا شام اور عراق میں بارود اور خون کی ہولی کھیل رہے ہیں ان کی نگا ہ میںمسلمان اہل ایمان نہیں ہیں وہ اپنے سوا ہر ایک کو اپنا دشمن اور مخالف سمجھتے ہیں ایسے گروہ کا ساتھ دینا یا انکے نام نہاد جہا د میں حصے دار بننا گناہ کبیرہ کے زمرے میں آتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ آج خوارج کا یہ دعویٰ ہے کہ اگر پیغمبر اسلام حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم بھی اس دور میں آتے تو وہ بھی ہما ری پیروی کرتے ایسے نافرمان اور گستاخ رسول گروہ کا مسلمانوں سے کوئی رشتہ نہیں ہے ۔ انہو ں نے کہاکہ خوارج کہ حوالہ سے رسول اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے پہلے بیان فرما دیا تھا یہ لوگ غیر مسلم ہیں انہیں مسلمانوں کی صف میں ہر گز شامل نہیں کیا جا سکتا ہے ۔ انہو ں نے کہاکہ مسلم امہ کے نوجوانوں کو حقیقی تعلیما ت سے روشناس کروانے کی اس پر فتن دور میں بے حد ضرورت ہے ۔ انہو ں نے کہاکہ قرآن و سنت پر عمل پہرا ہوکر ہی ہم اپنے ایمان اور مذہب کو کالی بھیڑوں اور بہروپیوں سے بچا سکتے ہیں۔

انہوں نے کہاکہ بین الاقوامی میڈیا ISIS داعش کو اسلام سے جوڑنے کی کوشش کررہا ہے لیکن ہما رے دین کے ساتھ ایسے لوگوں کا دور کا بھی واسطہ نہیں ہے ۔ نوجوان برطانوی سکالر جہا ن محمود نے ISIS کے حوالہ سے تفصیلی رپورٹ پیش کرتے ہو ئے کہاکہ اصل میں عراق میں شعیہ سنی فسادات کے بعد جنم لینے والی یہ غیر جمہو ری اور غیر اسلامی تحریک نے مسلمانوں کو بے حد نقصان پہنچایا ہے یہ لوگ سوشل میڈیا سے ناجا ئز فائدہ اٹھا تے ہو ئے ہما رے بچوں اور بچیوں کی ذہن سازی کر کے انہیں اپنے ساتھ شامل کر رہے ہیں انہو ں نے کہاکہ ان نام نہاد جہا دیوں سے شادی کرنے کے لیے کئی مسلمان جہا دی دلہنیں ان کے چنگل میں پھنس چکی ہیں ۔ انہو ں نے کہاکہ سکاٹ لینڈ سے جا نے والی اقصیٰ محمود اور لند ن سے دو مسلمان بہنوں نے سریا اور شام پہنچ کر سوشل میڈیا کے زریعہ سے دوسری برطانوی مسلم لڑکیوں کو اپنے ساتھ جہا د میں شامل اور ان داعش کے نام نہا د جہا دیوں کے ساتھ شادیاں کرنے کی باقاعدہ تشہیر شروع کررکھی ہے۔

انہوں نے کہاکہ بین الاقوامی میڈیا کے پروپیگنڈہ کے زریعہ سے بھی اس دہشتگرد تنظیم کی نقل و حرکت کھل کر سامنے آئی جس کی بدولت انہیں زیادہ شہرت حاصل ہوئی ۔ انہو ں نے کہاکہ جو برطانوی شہری لیبیا میں جہا د کی غرض سے شامل ہو نے گئے تھے وہ واپس آنے کی بجا ئے آئی ایس آئی ایس کے ساتھ شامل ہو گئے ۔ انہو ں نے کہاکہ دہشتگردی اور انتہا پسندی کے اس فتنے سے محفوظ رہنے کے لیے ہمیں مو ئثر حکمت عملی اپنا نا ہوگی ۔مذہبی سکالر شیخہ صفیہ شاہد نے کہاکہ نوجوان مسلم بچیوں کو چا ہیے کہ اپنے ایمان کی سلامتی کے لیے ان نام نہا د جہا دیوں کے شر سے محفوظ رہیں ۔ انہو ں نے کہاکہ حقیقی تعلیمات کی کمی اور والدین کی عدم تو جہی کی وجہ سے آج کئی مسلمان بچیاں ISIS کے نام نہاد جہا دیوں کے ساتھ شامل ہو نے اور شادیاں کرنے کے لیے یہاں سے ہجرت کی غرض سے جا رہی ہیں۔

انہوں نے کہاکہ نوجوان نسل کو بچانے کے لیے انہیں بنیا دی اسلامی تعلیمات سے مزین کرنا ہو گا ۔ فرح سلیمان نے کہاکہ میڈیا ایک طا قتور ہتھیا ر کی شکل اختیار کرچکا ہے ریڈیو ٹیلی ویثرن اور سوشل میڈ یا کے زریعہ سے پو ری دنیا نے ایک گا ئو ں کی حیثیت اختیا ر کرلی ہے لیکن مثبت اور منفی معلومات پر چیک اینڈ بیلنس ہونا نہایت ضروری ہے ۔ اس موقع پر ایم پی خالد محمود ، کونسلر عنصر علی خان ، کونسلر محمد افضل ، صوفی جا وید اختر سجادہ نشین آستانہ عالیہ گھمکول شریف برمنگھم ، احسان الحق ،ظفر محمود ،محمد سلیم ، حدیبہ شاہ اور دیگر نے خصوصی شرکت کی تقریب کے اختتام پر ISIS اور داعش کی غیر اسلامی نقل و حرکت کو ایک متفقہ قرارداد کے زریعہ سے مکمل طور پر مسترد کیا گیا۔