بند مٹھی

Allah

Allah

تحریر : نگہت سہیل
ہر انسان کو خدا نے کسی نہ کسی خوبی اور صلاحیت سے نوازا ہے اور خوبیوں اور صلاحیتوں میں اضافے اور نکھار کے اسباب بھی اللہ تعالیٰ ہی پیدا کرتا ہے۔ ہر انسان کی عطا کردہ خدا داد صلاحیتیں اگر دوسروں کے کام آئیں تو کیا ہی بات ہے۔ انتظار صحیح وقت اور صحیح موقعے کا ہوتا ہے۔ جب انسان ذہنی طور پے اپنی صلاحیتوں کو بروئۓکار لانے کے لئے تیار بھی ہو اور حالات بھی مناسب ہوں۔ کچھ لوگوں کو اللہ تعالیٰ نے صرف اور صرف اچھائیوں کے لئے پیدا کیا ہوتا ہے۔ یہ اُسی کی دین ہے۔ اور انہی اچھائیوں سے وہ معاشرے کے بگاڑ کو سنوارنے میں مدد بھی فراہم کرتا ہے۔

ایسے میں خود بخود ارد گرد کے لوگ اور حلقہ احباب وسیلہ ظفر بن جاتے ہیں اور اگراِن صلاحیتوں کے ساتھ علم وادب کا اضافہ ہو جائے تو راستہ اور بھی آسان ہو جاتا ہے۔ ضرورت صرف اس امر کی ہوتی ہے کہ اس آسان راستے پر رہنمائی کرنے والا بھی کوئی موجود ہے کہ نہیں اور درست سِمت میں منزل کا تعین کرنے کے لئے بھی انسان بہت سے مراحل سے گزرتا ہے۔ جن میں سختیاں بھی ہیں اور آسانیاں بھی۔ آنکھوں کو خِیرہ کرنے کے لئے چکا چوند روشنیاں بھی ہیں اور رستے سے بھٹکانے کے لوازم بھی موجود ہوتے ہیں۔ ایسے میں اپنی اقدار شرافت اپنا کلچر تعلیم و تربیت اور سب سے بڑھ کر عزت وانا ایسے رستوں کے تعین میں مدد فراہم کرتے ہیں جو نہ صرف سیدھے ہوں بلکہ آپ کی تعلیم و تربیت پے حرف نہ آنے دیں۔

ہمارے لئے ایسے ہی رہنما کا نام شاہ بانو میر ہے۔ جِن کے زیر سایہ ادب اکیڈمی عِلمی اور ادبی صلاحیتیں رکھنے والی گھریلو خواتین جو کہ تعلیم یافتہ ہیں ایسے پلیٹ فارم کی متلاشی تھیں جہاں نہ صرف ان کے کام اور صلاحیتوں کو سراہا جائے بلکہ عزت و قدر اور حوصلہ کے ساتھ قدم سے قدم ملانے اور ایک بند مُٹھی کی صورت باہم ہمدردی اور میل جول کے فروغ کا سبب ہو۔

Shah Bano Meer

Shah Bano Meer

27 ستمبر بروز ہفتہ کو شاہ بانو میر ادب اکیڈمی کے تحت ایک میٹنگ کا انعقاد کیا گیا۔ جس میں تمام خواتین نے باہمی امور پے تبادلہ خیال کیا اور آئیندہ لائحہ عمل کی تجاویز پربھی غور کیا گیا۔ چائے کے اہتمام کے ساتھ ساتھ تمام گفتگو بھی جاری رہی اور محترمہ ممتاز ملک صاحبہ اپنی شگفتہ بازیوں سے سب کو محظوظ کرتی رہیں۔ محترمہ وقارالنساءصاحبہ نے اپنے سالانہ شمارے دُرمکنون کی آئیندہ پبلشنگ اور موضوعات کے بارے میں سب کو آگاہ کیا محترمہ انیلہ احمد صاحبہ نے اپنی ادبی اور تحریری کاوشوں کا ذکر کیا یہ نیا نام ہے جو بہت جلد اپنے آپ کو منوانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ اور میں نگہت سہیل کالم نگاری میں کچھ کر گزرنے کی کوشش کر رہی ہوں۔ اللہ نےشاعری اور طنز و مزاح کی حس بھی الحمد للہ عطا کی ہے۔ جو اب اس ادارے کے زیر سایہ نکھار کی طرف بڑھنا چاہتی ہیں۔

شاہ بانو میر جی جاذبِ نظر ہونے کے ساتھ ساتھ علمی اور ادبی لحاظ سے بھی قدآور شخصیت ہیں ہماری رہنمائی میں بھی اِن کا بہت بڑا ہاتھ ہے جس کے لئے ہم سب ممبران ان کے تہہ دل سے شکر گزار ہیں۔ ہماری یہ اکیڈمی بند مُٹھی کی صورت مضبوط ہے اور الحمدُلِلہ تمام خواتین اچھے گھرانوں سے تعلق رکھتی ہیں اور اچھے ذہنوں کی مالک ہیں۔ جِن میں تعلیمی قابلیت کے ساتھ ساتھ علم وادب کا گہرا شعور بھی کُوٹ کُوٹ کر بھرا ہوا ہے۔ اللہ ہماری کاوشوں کو قبول کرے اور آگے بڑھنے میں مدد دے اور معاشرے کی اِصلاح کرنے میں ہمارا حصہ قبول فرما لے آمین۔

Shah Bano Meer Adab Academy

Shah Bano Meer Adab Academy

تحریر : نگہت سہیل
(شاہ بانو میر ادب اکیڈمی)