وفاقی وزیر برائے تعلیم بلیغ الرحمن کی یونیسکو کے 39ویں سیشن کی افتتاحی تقریب میں شرکت

Balig ur Rehman

Balig ur Rehman

پیرس (زاہد مصطفی اعوان سے) پاکستان کے وفاقی وزیر برائے تعلیم محمد بلیغ الرحمن اور چین کے وزیر تعلیم چن بیشنگ نے تعلیم کے شعبے میں پہلے سے موجود باہمی تعاون اور تعلقات کو مزید بڑھانے کی ضرورت پر اتفاق کیا ہے۔

دونوں وزراء نے طالبعلموں اور اساتذہ کے تبادلوں کو دونوں ممالک کے درمیان اقتصادی، سماجی اور ثقافتی تعلقات میں مزید مضبوطی لانے کا حامل قرار دیا۔

اس ملاقات میں معین الحق سفیر پاکستان و مستقل مندوب یونیسکو اور چین کے سفیر برائے فرانس ینگ شین اور دونوں ممالک کے وفود کے اراکین نے شرکت کی۔

وزیر تعلیم نے پاکستان میں تعلیم و تربیت کے شعبوں میں چینی امداد کے حصول کی تجویز پیش کی تاکہ پاکستان کے طالبعلموں اور ہنرمندوں میں ضرورت کے مطابق تعلیم اور ہنر سے آراستہ کیا جاسکے۔ تاکہ سی پیک اور چین کی ون بیلٹ اور ون روڈ کے سلسلے مستقبل میں پیدا ہونے ملازمت کے مواقعوں سے فائدہ اٹھایا جاسکے۔
انہوں نے حکومت چین کی جانب سے پاکستان کے مختلف علاقوں میں پانچ کنفیوشیس مراکز قائم کرنے پر چین کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ ان مراکز کے کھولے جانے سے پاکستان میں چینی زبان سیکھنے کے رحجان میں مزید اضافہ کرنے میں مدد ملے گی۔

وفاقی وزیر نے حکومت چین سے پاکستان کے ان طالبعلموں جو چین کے نجی و سرکاری اداروں میں تعلیم حاصل کرنے کے خواہاں ہیں کیلئے خصوصی مراعات دینے کی تجویز بھی پیش کی جس کا چینی وزیر نے مثبت جواب دیا۔

دونوں رہنماؤوں نے کثیرالجہتی بین الاقوامی اداروں جن میں یونیسکو بھی شامل ہے کے ساتھ پاکستان اور چین کے درمیان موجودہ تعاون پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس تعاون سے دنیا میں امن اور ترقی کے منصوبوں کو آگے بڑھانے میں مدد ملی ہے۔
اس سے قبل وفاقی وزیر تعلیم نے یونیسکو جنرل کانفرنس کے 39ویں اجلاس کے افتتاحی اجلاس میں بھی شرکت کی۔

وفاقی وزیر برائے تعلیم یونیسکو کے 39ویں اجلاس میں پاکستانی وفد کی قیادت کیلئے کل پیرس پہنچے تھے۔ وہ اپنے قیام کے دوران یونیسکو کانفرنس میں ملکی نقطہ نظر پیش کرنے کے ساتھ ساتھ مختلف ممالک جن میں ڈنمارک، ملائشیا، ناورے اور ترکی شامل ہیں کے ہم منصبوں کے ساتھ دوطرفہ ملاقاتیں بھی کریں گے۔ اس کے علاوہ وہ یونیسکو کی سبکدوش ہونے والی اور نئے منتخب ہونے والی ڈائریکٹر جنرلز سے بھی ملاقاتیں کریں گے۔