پاکستان یونیسکو کے مینڈیٹ اور اصولوں پر کاربند رہنے کا عزم رکھتا ہے۔ شذرہ منصب علی خان

Dr. Shezra Mansab Ali Khan

Dr. Shezra Mansab Ali Khan

پیرس (زاہد مصطفی اعوان) پاکستان یونیسکو کے مینڈیٹ اور اصولوں پر کاربند رہنے کا عزم رکھتا ہے اور یونیسکو سے بات چیت کے ذریعے ثقافتی تنوع کو فروغ دینے کے عمل کی حمایت کرتا ہے۔ جس کی وجہ سے دنیا میں تعلیم اور سائنسی تعاون کے ذریعے لاکھوں لوگوں کی زندگیوں کو بہتر بنایا گیا ہے۔

یہ بات محترمہ شذرہ منصب علی خان، رکن قومی اسمبلی پاکستان نے آج یونیسکو ہیڈ کوارٹر پیرس میں یونیسکو ایگزیگٹیو بورڈ کے 204ویں اجلاس میں ملکی بیانیہ پڑھتے ہوئے کہی۔

ایگزیگٹیوبورڈ کے اجلاس میں ڈائریکٹر جنرل یونیسکو میں آڈرے آذولے، سفیر پاکستان جناب معین الحق اور ایگزیگٹیو بورڈ کے 58 ممبران نے شرکت کی۔

ڈاکٹر شذرہ منصب علی خان نے ایگزیگٹیو بورڈ کو یقین دہانی کرائی کہ پاکستان یونیسکو کے سلسلے میں اس کے حصے کی تمام ذمہ داریاں پوری کرے گا اور عالمی برادری کے ساتھ مل کر یونیسکو کے پلیٹ فارم سے دنیا میں انصاف، برابری، رواداری، اور ثقافتی ہم آہنگی کے قیام کیلئے کام کرتا رہے گا۔

پاکستان کے نمائندے نے کہا کہ پاکستان تعلیمی اور سماجی شعبے میں ایک مربوط اور وسیع بنیادی پروگرام پر عمل کر رہا ہے۔ جس میں تعلیم اور خاص طور پر بچیوں کی تعلیم پر خصوصی توجہ دی جا رہی ہے۔ انہوں نے اس سلسلے میں پاکستان کی طرف سے 10ملین ڈالر کی خطیر رقم سے ملالہ فنڈ کے قیام کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اس فنڈ کے قیام سے دنیا بھر میں بچیوں کی تعلیم کو فروغ دینے میں مدد ملے گی۔ انہوں نے جنوبی کوریا، اٹلی، اور قطر کی حکومتوں کا ملالہ فنڈ میں حصہ ڈالنے کے اقدام کا شکریہ بھی ادا کیا۔

انہوں نے یونیسکو کے ڈائریکٹر جنرل کی طرف سے یونیسکو میں سٹریٹیجک سطح پر تبدیلیاں لانے کی ان کی حالیہ تجویز کا خیرمقدم کیا اور اس بات پر زور دیا کہ یونیسکو کے مساوات پر مبنی منڈیٹ کے مطابق یونیسکومیں شفافیت اور باہمی شراکت کی بنیاد پر فیصلہ لینے کے عمل کو یقینی بنایا جائے۔

پیرس میں اپنے قیام کے دوران ڈاکٹر شذرہ منصب علی خان کھرل نے یونیسکو کی جنرل کانفرنس کے صدر، ایگزیگٹیو بورڈ کے صدر اور یونیسکو کے سینئر حکام کے ساتھ ملاتیں بھی کریں گی۔